لاٹھی یا کچھ بھی نہیں؟

متی 9:10 -”کیا حضرت عیسیٰ مسیح نے اپنے شاگردوں کو اپنے سفر میں لاٹھی لینے کو منع کیا یا اجازت دی؟“

شاگردوں سے کہا گیا کہ وہ سفر کے لئے سامان لینے یا نئی لاٹھی خریدنے میں وقت ضائع نہ کریں لیکن اگر اُن کے پاس پہلے سے لاٹھی تھی تو اُنہیں اُسے اپنے ساتھ لے جانے کی اجازت تھی۔ہمیں یہ فرض کرنا چاہئے کہ سفر کے لئے اضافی سامان نہ خریدنے کی غرض سے لوقا کا مطلب بھی وہی ہے جو متی کا ہے۔ضروری طور پر حضرت عیسیٰ مسیح فرما رہے تھے،جیسے تم ہو ویسے ہی جاؤاور سفر کے لئے کوئی سامان نہ خریدو،
خُدا تعالیٰ تمہیں خود عطا کر دیں گے۔اناجیل ہمیں واضح طور پر یہ بتاتی ہیں کہ حضرت عیسیٰ مسیح کے احکام دقیانوسی معنویت پر مرکوز نہیں تھے بلکہ فہم اور فرماں برداری کی سمجھ پر مرکوز تھے۔

اناجیل کے مُستند ہونے پر سوال اُٹھانے کے لئے ایک معمولی بات سامنے لائی گئی ہے، جو نقادوں کی مایوسی کی باتوں کو ظاہر کرتی ہے۔یہ حقیقت کہ صدیوں سے مسیحی نقل نویسوں نے اِس اقتباس کو تبدیل کرنے کی کوشش نہیں کی او ریہ اصلی متن کے معتبر ہونے کا ایک ثبوت ہے جسے جان بوجھ کر بگاڑا یا مسخ نہیں کیا گیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.