سانپ مٹی کھاتے ہیں؟

پیدایش 3:14—”سانپ مٹی نہیں کھاتے!”

ظاہر ہے کہ سانپ اپنی نشو ونما کے لئے مٹی نہیں کھاتے اگرچہ وہ سونگھنے کے لئے مٹی کے چند ذرات اپنی زبان پر ضرور لیتے ہیں تاکہ ہوا کو “چکھ” سکیں۔تاہم،”مٹی کھانا” یا “مٹی چاٹنا” (عبرانی : ועפר תאכל اور לחכו עפר) (وعافار توکال اور لحکوعافار) محض عبرانی محاورات ہیں جو شرمندگی اور شکست کو ظاہر کرتے ہیں:

"بیابان کے رہنے والے اُس کے آگے جھکیں گے اور اُس کے دُشمن خاک چاٹیں گے۔" (زبور شریف 72:9) "بادشاہ تیرے مربّی ہوں گے اور اُن کی بیویاں تیری دایہ ہوں گی۔وہ تیرے سامنے منہ کے بل گریں گے اور تیرے پاؤں کی خاک چاٹیں گے اور تُو جانے گی کہ میَں ہی خداوند ہوں جس کے مُنتظر شرمندہ نہ ہوں گے۔"(یسعیاہ 49:23)

سانپ کا مٹی کھانا ایک استعارہ ہے جو یہ ظاہر کرتا ہے کہ اللہ تعالیٰ نے انسان کو زوال پر اُکسانے کی وجہ سے سانپ کو شرمندہ کیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.